وزیر اعظم کی زیر صدارت مشاورتی اجلاس کی اندرونی کہانی

[ad_1]

وزیر اعظم عمران خان  کی زیر صدارت بھارت کے ساتھ تجارتی روابط کے حوالے سے مشاورتی اجلاس کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ہے۔

اجلاس میں وزیراعظم عمران خا ن نے کہا کہ ہندوستان سے کاٹن اور چینی کی درآمد کے حوالے سے اقتصادی رابطہ کمیٹی کی سفارشات پر وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی اور دیگر کابینہ ممبران سے مشاورت کے بعد ان سفارشات کو مسترد کر دیا ہے۔

عمران خا ن نے کہا کہ پاکستان کے موجودہ حالات میں بھارت سے کسی قسم کی تجارت نہیں کریں گے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا  کہ بھارت کے ساتھ آگے بڑھنے کے لئے ضروری ہے کہ بھارت کی جانب سے  سازگار ماحول فراہم کیا جائے تاکہ بھارت 5 اگست 2019 کے یکطرفہ اور غیر قانونی اقدامات پر نظرثانی کرے۔

ذرائع کے مطابق اقتصادی رابطہ کمیٹی کا یہ فیصلہ گذشتہ روز کابینہ ایجنڈے میں شامل نہیں تھا جبکہ اقتصادی رابطہ کمیٹی کے فیصلے کابینہ  کے سامنے توثیق اور حتمی منظوری کے لئے پیش کیے جاتے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ  اقتصادی رابطہ کمیٹی کی جانب سے خالصتا کمرشل نقطہ نگاہ سے درآمد کی سفارشات کابینہ کے لئے مرتب کی گئیں ہیں۔

ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ کابینہ  کی جانب سے معاملہ اٹھانے پر وزیرِ اعظم عمران نے ہدایت کی تھی کہ اقتصادی رابطہ کمیٹی کا فیصلہ فوری طور پر موخر کر دیا جائے گا۔

[ad_2]

Source link

Updated: اپریل 2, 2021 — 7:59 شام

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

BFT News © 2022 Frontier Theme