251 فلسطینیوں کی شہادت کے باوجود جرمنی کا اسرائیل سے اظہار یکجہتی

[ad_1]

تل ابیب: جرمنی کے وزیر خارجہ ہیکو ماس نے کہا ہے کہ وہ اسرائیل کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے یہاں آئے ہیں۔

غزہ: حماس کو آئندہ 24 سے 48 گھنٹوں میں جنگ بندی کی امید

اسرائیلی ذرائع ابلاغ کے مطابق جرمنی کے وزیر خارجہ نے کہا کہ اسرائیل کو وسیع پیمانے پر ہونے والے ناقابل تلافی حملوں کے خلاف اپنے دفاع کا پورا حق حاصل ہے۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق جرمنی کے وزیر خارجہ ہیکو ماس نے اسرائیل کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے جنگ بندی کا بھی کہا ہے۔

جرمنی کے وزیر خارجہ اسرائیل کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنے ایک ایسے وقت میں پہنچے ہیں کہ جب اسرائیل کی جانب سے کی جانے والی وحشیانہ بمباری کے نتیجے میں 251 بے گناہ فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔ شہدا میں 66 بچےاور 38 خواتین بھی شامل ہیں۔

غزہ: اسرائیلی بمباری سے 52 ہزار فلسطینی بے گھر ہوئے ہیں، اقوام متحدہ

فلسطینیوں کو پہنچنے والے بھاری جانی و مالی نقصان کی نسبت خود اسرائیل نے تسلیم کیا ہے کہ حماس کے راکٹ حملوں کے نتیجے میں اس کے صرف 12 شہری ہلاک ہوئے ہیں۔

جرمنی کے وزیر خارجہ نے اسرائیل کو ناقابل تلافی نقصان پہنچنے کا بھی ذکر کیا ہے لیکن انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ اسرائیلی بمباری سے 72 ہزار فلسطینی بے گھر ہوئے ہیں اور 500 سے زائد مکانات مکمل طور پر تباہ ہوچکے ہیں۔

اسرائیل نے تمام عالمی قوانین اور حدود و قیود کی دھجیاں اڑاتے ہوئے عالمی ذرائع ابلاغ کے دفاتر کو بھی بدترین بمباری کا نشانہ بنایا ہے جس کے نتیجے میں یوسف ابو حسین نامی صحافی نے بھی جام شہادت نوش کیا ہے۔

وقت آگیا ہے اب اسرائیل کو کہا جائے کہ بس کرو، شاہ محمود قریشی

یوسف ابو حسین نامی صحافی الاقصیٰ ریڈیو اسٹیشن سے وابستہ تھے اور عرصہ دراز سے ‏پیشہ وارانہ فرائض انجام دے رہے تھے۔

[ad_2]

Source link

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

BFT News © 2022 Frontier Theme