نااہل ترین حکومت کا صرف ترین نکل گیا تو یہ گھبراگئے،مرتضیٰ وہاب

[ad_1]

ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب نے کہا ہے کہ نااہل ترین حکومت کا صرف ترین نکل گیا تو یہ گھبرا گئے ہیں۔

تفصیلات کےمطابق ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کہتے ہیں کوئی ایک اسکینڈل بتا دیں اور میں عمران خان کے ایک درجن اسکینڈل بتاؤں گا۔

انہوں نے کہا کہ پہلا اسکینڈل شوگر مافیا سے منسلک افراد کا ہے ،چینی 55  روپے سے سنچری کراس کر جاتی ہے۔

ترجمان سندھ حکومت کا کہنا تھا کہ چینی 110 سے 100 پر آتی ہے تو کہتے ہیں واہ کیا کپتان ہے، وزیراعظم کے نوٹس کے بعد چینی کی قیمت 110 روپے ہوجاتی ہے اور ان کے لوگ یہ نہیں سوچتے کہ چینی 55 سے 110 کی ہوئی ہے۔

مرتضیٰ وہاب نے یہ بھی کہا کہ صدرمملکت آئین کے تحت وزیراعظم کو اکثریت ثابت کرنے کا کہیں۔

انہوں نے کہا کہ راولپنڈی رنگ روڈ منصوبے کی شکل میں اربوں کا ٹیکہ لگایا ہے جبکہ رنگ روڈ منصوبے کی لاگت میں اربوں روپے کا اضافہ کیا گیا ہے۔

مرتضیٰ وہاب نے حکومت سے سوال کرتے ہوئے کہا کہ کیا پاکستان کے کپتان کے پاس قومی اسمبلی میں اکثریت ہے؟ اور وسیم اکرم پلس عثمان بزدار کے پاس بھی اکثریت ہے یا نہیں؟

ترجمان سندھ حکومت کا کہنا تھا کہ جہانگیر ترین گروپ کے پریشر کے اثرات نظر آرہے ہیں، کیسز ختم ہوجائیں گے یا وہ بجٹ میں ووٹ دے کرحکومت بچالیں گے۔

انہوں نے کہا کہ دوسرا اسکینڈل چینی اور تیسرا اسکینڈل ادویات کا ہے جبکہ چوتھا اسکینڈل پٹرولیم مصنوعات کا ہے۔

مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ قیمتیں کم ہونے پر پٹرول کا بحران پیدا ہو گیا ہے۔

ترجمان سندھ حکومت کا کہنا تھا کہ عمران خان مافیاز کے سامنے جھکتے نہیں سائیڈ سے نکل جاتے ہیں اور مافیاز کے سامنے کھڑے ہو کر کہتے کہ پٹرول فروخت کرنا پڑے گا۔

ترجمان نے یہ بھی کہا کہ ادویات کی قیمتوں میں کئی گناہ اضافہ ہوا اور سب کو معلوم ہے کہ ادویات کی قیمتوں میں کس کے کہنے پر اضافہ ہوا ہے۔

مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے کہا وزیرصاحب آپ استعفیٰ دے دیں اور کچھ عرصے بعد اسی وزیر کو پارٹی کا سیکریٹری جنرل بنا دیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پانچواں اسکینڈل ایل این جی کا ہے۔

مرتضیٰ وہاب نے یہ بھی کہا کہ عمران خان نے اپنی ہمشیرہ کو این آر او دیا ہے۔

ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب  کا مزید کہنا تھا کہ پنجاب کی 600 سوسائٹیز کو این آر او دیا گیا جبکہ سب کو معلوم ہے سوسائٹیز کس کی ہیں اور تانے بانے کہاں سے ملتے ہیں۔


Double Click 970 x 90

[ad_2]

Source link

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

BFT News © 2022 Frontier Theme