پاکستان کا دو ٹوک فیصلہ ہے ہندوستان کے ساتھ تجارت نہیں ہو سکتی، وزیرِخارجہ – بول نیوز

[ad_1]

وزیرِخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان کا دو ٹوک فیصلہ ہے ہندوستان کے ساتھ تجارت نہیں ہو سکتی۔

تفصیلات کے مطابق وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی نے ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پریشان کن ہے، پاکستان اور ہندوستان دونوں اٹیمی قوتیں ہیں اور دونوں ممالک کے مسائل کا واحد حل ڈائیلاگ ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان نے ہمیشہ دوستانہ تعلقات کی خواہش کی اور ہمیں بھارت سے مذکرات کرنے میں کوئی ڈر نہیں اگر ہندوستان آگے بڑھنا چاہتا ہے تو اسے بات چیت کا ماحول بنانا ہوگا۔

وزیرِ خارجہ نے یہ بھی کہا کہ چین کے پاکستان سے تعلقات کی نوعیت کو سمجھتا ہوں، چین کے وزیر خارجہ اور ایران کے معاہدے پر چینی وزیر کا بیان پاکستان کے لیے نہیں تھا جبکہ جوبائیڈن نے جو اجلاس بلایا ہے وہاں مدعو انہیں کیا گیا جہاں ماحولیاتی آلودگی زیادہ ہے پاکستان ان ممالک میں نہیں آتا۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ نواز شریف واپس آئیں اور عدالتوں کا سامنا کریں اور پاکستان کی عدلیہ پر اعتماد کریں، بظاہر اب دیکھائی دے رہا ہے نواز شریف کو اب کوئی بیماری سے خطرہ نہیں لہذا اخلاقی طور پر سابق وزیراعظم کو واپس آنا چاہیے۔

وزیرِ خارجہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ مریم نواز کے ٹوئٹ سے لگتا ہے وہ باہر نہیں جانا چاہتی مگر یہ تو فیصلہ مریم نواز نے کرنا ہے باہر جانا ہے یہ پھر پاکستان رہنا ہے اور اب دیکھنا ہے کہ مریم نواز کے بارے میں عدالتیں کیا کہتی ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ عمران خان میری نظر میں رول ماڈل ہیں جن کا رول ماحولیاتی تبدیلی میں بہت اہم ہے۔

وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ تحریک انصاف اقتدار میں رہے نا رہے کوئی مائی کا لال جنوبی پنجاب کا حق نہیں لے سکتا، تحریک انصاف کے منشور کے این مطابق جنوبی پنجاب کا منصوبہ اپنے انجام کو پہنچے گا جبکہ وزیر اعظم ملتان تشریف لائیں گے اور جنوبی پنجاب سکریٹریٹ کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔

[ad_2]

Source link

Updated: اپریل 4, 2021 — 2:28 شام

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

BFT News © 2022 Frontier Theme