سائیکلون توکتے، وزیر اعلیٰ سندھ نے اہم ہدایات جاری کردیں

[ad_1]

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سائیکلون   توکتے کے پیش نظر اہم ہدایات جاری کردی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعلیٰ سندھ  سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت سائیکلون توکتے کے پیش نظر انتظامات کے حوالے سے اہم اجلاس ہوا۔

اجلاس میں  وزیراعلیٰ سندھ کے مشیر مرتضیٰ وہاب ، چیف سیکریٹری ممتاز شاہ ،وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو، سیکریٹری خزانہ ، ایڈمنسٹریٹر کراچی، کمانڈر کورانجینئرنگ بریگیڈیئر  قاضی ناصر، ڈائریکٹر میٹ آفس سردار سرفراز ، ڈی جی  پی ڈی ایم اے سلمان شاہ ، ویڈیو لنک  پر سکھر سے وزیر آبپاشی سہیل انور اور دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

ڈائریکٹر میٹ نے اجلاس کو بریفنگ میں بتایا کہ  ایک ویدر سسٹم  بحیرہ عرب کے جنوب میں بن رہا ہے  جسے  سائیکلون توکتے کا نام دیا گیا ہے ۔

ڈائریکٹر میٹ  نے بتایا کہ اس سائیکلون  کے 3 طرح کے اثرات  ہوتے ہیں ۔ طوفانی بارشیں ،تھنڈر اسٹورم   یا  تیز ہوائیں،جس کو ہائی انٹینسٹی ونڈ زکہا جاتا ہے۔

سردارسرفراز نے بتایا کہ اگر ہوا کی رفتار 27-22 کٹس ہوتی ہے تو مٹی کا طوفان ہوگا، اگر ہوا کی رفتار 33-28 کٹس بنتی ہے تو درختوں کو نقصان ہوسکتا ہےاور  اگرہوا کی رفتار 47-34 کٹس ہوتی ہے تو گھروں کی چھتوں اور فصلوں کو  بھی نقصان پہنچ سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ  ابھی دیکھنا یہ ہے کہ سائیکلون کی رفتار کیا بنتی ہے ۔ اگر سائیکلون انڈیا گجرات  کو عبور کرتا ہے تو ٹھٹھہ ، بدین ، میرپورخاص ، عمر کوٹ اور سانگھڑ ڈسٹرکٹ  پر اس کے اثرات ہوں گے۔

ڈائریکٹر میٹ نے اجلاس کو بتایا کہ ٹھٹھہ ، بدین میرپورخاص، عمر کوٹ ، تھرپارکر  اور سانگھڑ  میں اچھی خاصی بارشیں ہوں گی۔  ٹھٹھہ  اور دیگر ڈسٹرکٹ  کو 100-80 کلومیٹر پی ایچ  طوفانی بارشیں  ہو سکتی ہیں ۔ یہ 17 مئی سے 20 مئی 2021 کو ان ڈسٹرکٹ میں اپنے اثرات پیدا  کرے گا۔

سردار سرفراز کا کہنا تھا کہ  اگر سائیکلون کراچی کے غربی ایریا کو کراس کر جاتا ہے تو کراچی، حب، لسبیلہ ، حیدرآباد  اور جامشورو ڈسٹرکٹ  میں 18 سے 20 مئی کو تیز ہواؤں کے ساتھ  بارشیں ہوسکتی ہیں۔

اس ضمن میں وزیر اعلیٰ سندھ نے  ایڈمنسٹریٹر کراچی کو شہر سے بل بورڈ ہٹانے کی ہدایت  کر تے ہوئے   ایمرجنسی  پلان ٹیم بنانے کے احکامات  دے  دیے ہیں۔

مراد علی شاہ نے کہا کہ  میٹ ڈپارٹمنٹ  اور پی ڈی ایم اے کی مشاورت  سے ایمرجنسی پلان بنا کر اقدمات کرنےہیں ۔

وزیراعلیٰ سندھ  نے بارشوں  کے امکانات کے پیش نظر کمشنر کراچی ، کے ایم سی اور ڈی ایم سی کو ہدایت کی کہ  نالوں کے چوکنگ  پوائنٹس  کو کلیئر  کرنا شروع کریں  جبکہ  ماہی گیر کل سے سمندر میں نہ جائیں۔

انہوں نے چیف سیکریٹری  کو کنٹرول روم  قائم کرنے کی ہدایت کر تے ہوئے کہا ہے کہ کنٹرول روم میں بی ایس -19 کے افسر کو ہیڈ بنایا جائے۔


Double Click 970 x 90

[ad_2]

Source link

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

BFT News © 2022 Frontier Theme