سخت لاک ڈائون نہ لگایاگیاتو حالات سنگین ہوجائینگے،این سی او سی کا چاروں صوبوں کوانتباہ

اسلام آباد نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر(این سی او سی) نے وفاق سمیت چاروں صوبوں کو لاک ڈائون مزید سخت کرنے کی ہدایت کردی اور ساتھ میں خبر دار کیا ہے کہ اگر انسداد کورونا ایس او پیز پر مکمل عملدآمد نہ کرایا گیااورلاک ڈائون سخت نہ کیاگیا تو حالات سنگین ہو جائیں گے ،چاروں صوبائی سیکرٹریز حالات کی سنگینی کو سمجھتے ہوئے اپنے اپنے صوبوں میں مزید پابندیاں عائد کریں ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کاخصوصی اجلاس وفاقی وزیر اسد عمر کی زیرصدارت اسلام آباد میں ہوا،
اجلاس میں وزارت صحت کے نمائندوں سمیت چاروں صوبوں کے چیف سیکریٹریز نے بھی شرکت کی۔اجلاس میں ملک میں کورونا وبا کی تیسری لہرکی تازہ ترین صورتحال اور ایس او پیز پر عملدر آمد کرانے سے متعلق حکمت عملی کا جائزہ گیا۔اجلاس میں شہریوں سے اپیل کی گئی کہ 70 سال سے زائد عمر کے بزر گ شہری کورونا ویکسی نیشن سے فوری طور پر فائدہ اٹھائیں ،کورونا کیسز بڑھنے کی وجہ سے ان کی زندگیوں کو خطرات لاحق ہوگئے ہیں؎ لہذا ان سے اپیل کی جاتی ہے کہ وہ جلد ازجلد کورونا ویکسین لگوائیں ۔اجلاس میں ملک میں چوبیس گھنٹوں کے دوران57افراد کی ہلاکت اور 4767نئے کیسز آنے پر انتہائی تشویش کا اظہار کیا گیا ۔اجلاس میں شہریوں کی جانب سے احتیاطی تدابیر اختیار نہ کرنے اور ایس او پیز پر عملدرآمد نہ کرنے پر تشویش کا اظہار کیا گیا اور شہریوں سے ساتھ ہی اپیل کی گئی ہے کہ وہ تمام احتیاطی تدابیر اختیار کریں تاکہ ان کی اور ان کے پیاروں کی زندگیاں کورونا وائرس سے محفوظ رہ سکیں۔

این سی او سی کے اجلاس کے دوران ڈاکٹر فیصل سلطان نے ویکسین سے متلعق بتایا کہ زیادہ انحصار چین اور دیگر ملکوں پر ہے جبکہ چین سے 10 لاکھ 60 ہزار خوراکوں پر مشتمل کھیپ منگل تک آجائے گی۔ڈاکٹر فیصل سلطان کا کہنا تھا کہ پاکستان کو عالمی ادارے سے کوویکس ایسٹرازینیکا ویکسین ملنے میں مزید تاخیر ہوئی ہے، کوویکس کے ذریعے پاکستان کو مارچ میں ایسٹرازینیکا ویکسین کی 28 لاکھ خوراک ملنا تھیں۔

اجلاس کے بعد این سی او سی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ 29 مارچ سے این سی او سی کی جانب سے صوبوں کو لاک ڈاؤن کے لیے تازہ ہاٹ سپاٹس کے نقشے فراہم کیے جائیں گے،5 اپریل سے شادی کی تقریبات پر ان ڈور اور آؤٹ ڈور مکمل پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ،صورتحال کے پیش نظر صوبائی انتظامیہ وقت سے پہلے پابندیاں عائد کرنے کے لیے بااختیار ہوگی ،مُلک بھر میں تمام اقسام کی انڈور اور آؤٹ ڈور اجتماعات پر فی الفور پابندی عائد کر دی گئی ،اجتماعات میں تمام اقسام کے سماجی، ثقافتی، سیاسی،سپورٹس اور دیگر اقسام بھی شامل ہیں ۔بین الاصوبائی ٹرانسپورٹ کم کرنے کے حوالے سے بھی مختلف آپشنز پر غور کیا گیا،ٹرانسپورٹ پر پابندی کے حوالے سےحتمی فیصلہ صوبوں سے ڈیٹا کی بنیاد پر کیا جائے گا۔این سی او سی کے مطابق صوبوں کو ویکسی نیشن کے ٹارگٹس پورے کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔نمز میں ویکسی نیشن کے لیے درست اور بروقت ڈیٹا کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

BFT News © 2022 Frontier Theme