ہمیں فلسطین کے حل کی طرف بڑھنا ہے،شاہ محمود قریشی

[ad_1]

وفاقی وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ ہمیں فلسطین کے حل کی طرف بڑھنا ہے۔

نیویارک میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ قوم نے ثابت کردیا ہے کہ ہم ایک زندہ قوم ہیں، ترک وزیرخارجہ سےتبادلہ خیال کے بعد نیویارک روانہ ہوا، ہم نے مشاورت کی کہ دنیا کو بتایا جائے فلسطین میں کیا ہورہا ہے، یہاں وزرائے خارجہ کو دعوت دی مشاورت سے لائحہ عمل دیں، اسرائیل کو نہ چاہتے ہوئے بھی جنگ بندی کا اعلان کرنا پڑا، یہ مسلم امہ کی کامیابی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کل سعودی عرب اور کویت کے وزیرخارجہ سے ملاقات ہوئی ہے۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ مظلوم فلسطینیوں کی آواز بننے کی کوشش کرونگا، محتلف ممالک میں احتجاج ریکارڈ نہ ہوتا تو یہ تبدیلی نہ آتی، جن سے پنجہ آزمائی ہورہی ہے ان کے ہاتھ بہت لمبے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ قبلہ اول بیت المقدس کا تقدس پامال کرنے کی کوشش کی گئی، یہ بڑی تکلیف دے اور اضطرابی صورتحال تھی، یہ عوامی دباؤ ہے جس کی وجہ سے اسرائیل نے پالیسی بدلی ہے، 11 دنوں میں فلسطینیوں پرقیامت ٹوٹی ہے، میں نے فلسطین کے ساتھ مسئلہ کشمیر پر بھی بات کی، ہم سب کو ملکر اور عالمی برادری کو اس طرف توجہ دینا ہوگی، جب تک اسکا مستقل حل نہیں نکالا جائیگا یہ آگ سلگتی رہے گی۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف اور حریف جماعتوں نے جو فیصلہ کیا وہ سب کے سامنے ہے، تمام جماعتوں کا شکرگزار ہوں جنہوں نے متفقہ قرارداد پاس کی، اللہ نے ہمیں سرخرو کیا ہے، اوآئی سی کی درخوست پر جنرل اسمبلی کا ہنگامی اجلاس بلایا گیا، دوران اجلاس ہی سیز فائر کی اطلاع ملی، سیزفائر مثبت قدم مگر ناکافی ہے، ہمیں حل کی طرف بڑھنا ہے، جنرل اسمبلی کے صدر نے صورت حال پر بڑا جامع بیان دیا، فلسطین اور مسئلہ کشمیر حل نہ ہوا تو دیر پا امن نہیں ہوگا، جادو کی چھڑی کسی کے پاس نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ فلسطین میں 230 افراد شہید جبکہ 50 ہزار بے گھر ہوئے، فلسطین میں لوگوں کو پانی اور خوراک کی فراہمی متاثر ہوئی، دعا کرتا ہوں اللہ تعالیٰ فلسطین کومستقل آزاد کرے۔


Double Click 970 x 90

[ad_2]

Source link

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

BFT News © 2022 Frontier Theme