موٹروے زیادتی کیس کا تحریری فیصلہ سامنے آگیا

تفصیلات کے مطابق انسداددہشت گردی عدالت کے جج ارشد حسین بھٹہ نے 45 صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ جاری کیا ہے۔ جس میں بتایا گیا ہے کہ ملزم عابد ملہی اور شفقت علی نے خاتون کو اسکے بچوں کے سامنے زیادتی کا نشنانہ بنایا۔

تحریری فیصلے کے مطابق خاتون کو زبردستی جنگل میں لے جانا مجرمان کی نیت کو ظاہر کرتا ہے، مجرمان نے خاتون کو زبردستی گاڑی سے نکالا اور جنگل میں لے گئے۔

عدالتی فیصلے کے مطابق خاتون کو اسکے بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنانا عام عوام کیلئے حیران کن ہے جس سے جرم کی سنگینی کا اندازاہ لگایا جا سکتا ہے۔

تحریری فیصلے میں یہ بھی کہا کہ عدالت کو کہیں نظر نہیں آیا کہ متاثرہ خاتون نے عابد ملہی اور شفقت علی کو جھوٹ کی بنیاد پر مقدمے میں ملوث کیا ہے۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا کہ تفتیشی ٹیم کی کوتاہیوں کے باوجود خاتون کی فرانزک گواہی کو رد نہیں کیا جاسکتا کیونکہ متاثرہ خاتون نے نہ صرف ٹرائل میں بلکہ جیل میں بھی مجرموں کی شناخت کی ہےاور ان کے الزامات حقیقت پر مبنی ہیں۔

عدالتی فیصلے میں جج ارشد حسین بھٹہ کا مزید کہنا کہ زیادتی کے مجرمان نے اپنے مطالبے منوانے کیلئے متاثرہ خاتون سے اسکے بچوں کو قتل کرنے کی دھمکی دی ایسے مجرموں سے آہنی ہاتھوں سے نمٹنا چاہیئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

BFT News © 2022 Frontier Theme